}); عظیم محقق شیخ کفایت اللہ سنابلی حفظہ اللہ پر بےجا لعن طعن ؟ – ابن حنبل انٹرنیشنل
اسماٗ الرجال

عظیم محقق شیخ کفایت اللہ سنابلی حفظہ اللہ پر بےجا لعن طعن ؟

از ابوالمحبوب انورشاہ راشدی حفظہ اللہ

بسم اللہ الرحمن الرحیم.

شیخ کفایت اللہ سنابلی حفظہ اللہ ہمارے قریبی دوستوں میں سے ہیں، جنکی خدمات وتالیفات کو وقت کے جید علماء کرام نے خراج تحسین پیش کیاہے،، مثلا شیخ ارشاد الحق اثری شیخ وصی اللہ عباس، شیخ صلاح الدین یوسف، شیخ مبشر احمد ربانی ( حفظھم اللہ تعالی)
انوار البدر ” کتاب انکی لاجواب اور بے مثال تصنیف ہے،،، ذرا اس کتاب پر لکھی گئی تقاریظ ملاحظہ کی جائیں،، کتاب اور صاحب کتاب کی اہمیت معلوم ہوجائیگی،،،
اسی طرح اور بھی انکی علمی وتحقیقی تصانیف، رسائل ومقالات بھی ہیں، جو کسی وقت مجموعی صورت میں بھی منظرعام پر آجائینگے.ان شاء اللہ العزیز.
اسکے برعکس بعض احباب ان سے بے حد بغض وحسد کرتے ہوئے انکے بارے سب شتم لعن وطعن کاکوئی موقعہ ہاتھ سے جانے نہیں دیتے،، اور بہتان بازیوں کذب بیانیوں کی ان پر بلاوجہ بوچھاڑ کردیتے ہیں،، لیکن عزت وذلت کسی کی جاگیروملکیت نہیں،، اسکا مالک صرف رب العالمین کی ذات مبارکہ ہے،، اللہ تعالی نے شیخ حفظہ اللہ کو کئی نعمتوں کے ساتھ ساتھ عزتوں سے بھی نواز رکھا ہے، اہل علم انکی قدر کرتے ہیں، وہ انکی مدح سرائی میں رطب اللسان ہیں،، میں دل وجان سے انکی قدرکرتا ہوں، مجھ سے بھی وہ بے پناہ محبت کرتے ہیں، اورگاہے گاہے حوصلہ افزا اور مفید مشوروں سے بھی نوازتے رہتے ہیں،، جزاہ اللہ خیراواحسن الجزاء.
حال ہی میں کسی صاحب نے ان پر بغیر کسی تحقیق کے کذب بیانی، اور جھوٹی تہمتیں لگاکر خود کوعنداللہ اثیم بنادیا ہے
واللہ،، کس قدر ان پر بلاوجہ بہتان بازی، الزام تراشی کرتے ہوئے انکی ذات کومطعون کیا ہے،،، روز قیامت شیخ کفایت اللہ کے ہاتھ ان صاحب کے گریبان میں ہونگے ( اگر ان صاحب نے معافی نہ مانگی تو) میں نے تو ان صاحب کی یہ تحریر صاف نہ ہونے کے سبب سرسری طور پر پڑھی ہے، علمی تو کوئی جواب نہیں دیا ہے سوائے لعن وطعن کے.

شیخ کفایت اللہ سے جہاں بھی کہیں اس قسم کے لوگوں نے بحث کی ہے،، مثلا، محدث فورم، فیس بوک وغیرہ،، تو انہیں اتنی، اور گھٹیاں گالیوں سے نوازتے ہیں کہ بندہ حیران ہوجائے، اچھے بھلے لوگ بھی اس عادت سیئہ میں ملوث نظرآتے ہیں، عجیب طرز نکل پڑا ہے، لکھنے کاانداز یہ بن گیا ہے “شیخ کفایت اللہ سنابلی کے اتنے جھوٹ ” کوئی کتنے جھوٹ گنواتا ہے، کوئی کتنے،، ان صاحب نے “پانچ جھوٹ گنوائے ہیں،،
اپنی تحریر کا عنوان یوں دیا ہے:
“کفایت اللہ سنابلی ہندی کی تحریر کا مختصر مگر جامع تجزیہ
بنام کفایت اللہ سنابلی کے اکاذیب واباطیل کا تحقیقی جائزہ”
اس کے تحت پھر پانچ جھوٹ گنوائے ہیں، جبکہ حقیقت میں یہ سارے جھوٹ صاحب تحریر کے کھاتے میں جائیگے، بلکہ انہیں “جھوٹے الزامات اورتہمتیں ” کہاجائیگا،کہ بلاوجہ انہوں نے کسی غیر کی تحریر کو انکی طرف منسوب کرکے جھوٹی تہمتیں لگانا شروع کردیں، ان صاحب کی تحریر فیس بوک وغیرہ پر موجود ہے،، سوائے جھوٹی تہمتوں کے اس میں کچھ بھی نہیں، لیکن نام رکھا . “……تحقیقی جائزہ ” اب اگر گالم گلوچ، اور جھوٹی تہمتیں بھی “تحقیقی جائزہ”ہے تو پھر اصل حقیقی تحقیق کا پھر اللہ ہی حافظ ہے،، نقل کے اندازے اور طرز عجیب متعارف کیےجارہے ہیں، اب جس شخص نے بلاوجہ شیخ پر بہتان بازی کرکے اہنے سینے کی جلن وآگ کو محض ٹھنڈا کرنے کے لیے یہ اکاذیب وافتراءات گھڑ کرانکی طرف منسوب کیے ہیں، تو ایسے شخص سے آخر خیر، علمی وتحقیقی کام کی کیاتوقع کی جاسکتی ہے،، حیرانی تو اس پر بھی بہت ہورہی ہے کہ لوگ اس کی تحریر کو لائک اور عمدہ تحریر باور کرارہے ہیں،، انصاف کے پیمانے بدل گئے، انداز گفتگو اور لکھنے کااسلوب نئی ورائٹیوں میں آنے لگے، اور ایسے سلسلوں کو “علمی وتحقیقی “کانام دیکر مارکیٹ میں لایاجارہاہے، اور اپنے تئیں یہ سوچ بیٹھے ہیں کہ دین کی خدمت ہورہی ہے
فاناللہ واناالیہ راجعون .
خدارا! اگر تحقیقی وعلمی انداز دیکھنا ہوتو جدامجد رحمہ اللہ کی تحریرات دیکھیں، شیخناارشاد الحق اثری حفظہ اللہ کی تصانیف وتالیفات دیکھیں، کس قدر ان میں نفاست اور عمدگی بھڑی پڑی ہے، یہاں تو اپنوں کے خلاف اتنازہر اگلاجاتا ہے کہ وہ عبارات دہرانے میں سر شرم سے جھک جاتا ہے، لیکن شیخین کریمین کی تحریرات میں تو غیروں کے ساتھ حددرجہ نرمی کااسلوب اپناتے ہوئے محض دلائل پر توجہ مرکوز رکھی گئی ہے، انکی تحریرات میں علمی پختگی نظر آئیگی، اور دل سے انکے لیے بہت زیادہ دعائیں نکلتی ہیں، بار انکی کتب پڑھنے کی آرزو وتمنا رہتی ہے .اور ہماری تحریرات کا موجودہ اندازدیکھ کر زبان سے بے ساختہ “اناللہ “کے الفاظ صادر ہوجاتے ہیں، انکے لیے دعائیں تو دور بلکہ انکے اس شر سے امت کو بچنے کے لیے دعائیں نکلتی ہے، کس طرح انکو تحقیق کے نام پر گمراہ کیاجارہا ہے،،
لگتاایسے ہے کہ جیسے انکی نظر سے یہ آیت “مایلفظ من قول الالدیہ رقیب عتید “اور ان جیسی دوسری آیات کریمہ واحادیث مبارکہ نہیں گذریں کہ اس قدر بے لگام شتر مہارہوکر لکھتے ہیں جیسے انکو اپنی غلط باتوں کا جواب ہی نہیں دیناہوگا،واللہ ان صاحب نے شیخ کفایت پر یہ سارے جھوٹ بول کر گناہ عظیم کاارتکاب کیاہے،، ہماری دعا ہے اللہ تعالی شیخ کفایت اللہ کو مزید عزتوں اور نعمتوں سے نوازے، انہیں اور زور قلم عطاکرے، انکی تالیفات وخدمات میں برکت فرمائے، انکے لیے ان تصانیف کو ذریعہ نجات بنائے، اللھم آمین.
یہ تحریر اس لکھی ہے کہ چونکہ صاحب تحریر نے غصہ وحسد کی وجہ سے شیخ پر جھوٹی تہمتیں لگائی ہیں اس لیے ضروری سمجھا کہ اسکی وضاحت کی جائے.
اصل بات یہ ہے کہ شیخ زبیررحمہ اللہ کے حوالے سے “قصہ غرانیق پر میں نے ایک چھوٹی سی تحریر لکھی.جس پر ان صاحب نے رد لکھا اور اس رد پر ہمارے ایک دوست( جوامریکا میں رہتے ہیں ) نے ان صاحب کی اس تحریر کاتعاقب کیا، معاملہ بلکل واضح تھا منصف مزاج ہماری طرف سے ہیش کردہ تحاریر کو پڑھنے کے بعد یقینا اس نتیجہ پر پینچیں گے کہ “قصہ غرانیق شیخ زبیررحم اللہ کے منہج کے مطابق “صحیح، یاحسن لذاتہ ” بنتاہے، لیکن انہوں نے اسے نہیں بنایا، دونوں تحاریرکاخلاصہ یہی تھا، لیکن ان صاحب کا میں دعوی سے کہ رہا ہوں بلکل بھی مطالعہ نہیں ہے اور بلاوجہ سس بحر میں کود پڑے ہیں، خدارا آپنے ان علمی واصولی باتوں کو مذاق سمجھاہوا ہے جو اہل علم کے خلاف زہر آلود مواد کو لیکر آدھمکتے ہیں، جب تک اچھی طرح سے جانکاری اور اطلاع نہ ہو اور فن سے عدم واقفیت ہوتو ایسا شخص قطعا قطعا قطعا لائق نہیں کہ ایسے علوم پر لکھنے کی جرات کرے، یقینا ایسے لوگوں نے ان عظیم علوم کو مذاق اور کھیل وتماشہ بناکررکھ دیا ہے،
بہتر یہی ہے کہ سربراہان ایسے لوگوں کو ایسی غلیظ اور گری ہوئی حرکتوں سے بازرکھیں، اور یقینایہ انکا فرض بھی بنتاہے، ورنہ انہی لوگوں کی وجہ سے گندگی کے یہ اثرات ان پر بھی پڑینگے،
وہ ( سربراہان)خود علمی ردو لکھتے ہیں، یہی کافی ہے اور یہ علمی سلسلے چلتے رہینگے اور یہ بہاریں جاری وساری رہینگی،، لیکن اگر ناکارہ لوگ آکر فاضل شخصیات پر آکر لعن وطعن کرینگے، تو پھر یہ سارا کیچڑ ان پر پڑیگا،، بہتر یہی ہے کہ فریقین اس قسم کے لچرباز افراد کو روکیں یاکم ازکم ان سے برات کااعلان کردیں،، تاکہ یہ علمی وتحقیقی مباحث کو مزید کوئی کھلواڑ نہ بناسکے اور اہل علم کے گریبانوں میں مزید اپنے ہاتھ نہ ڈال سکیں.
۰۰۰۰( ابوالمحبوب سیدانور شاہ راشدی)

Calendar

January 2019
S S M T W T F
« Dec    
 1234
567891011
12131415161718
19202122232425
262728293031  

RSS Meks Blog

  • Meks’s top 10 WordPress related posts in 2018 January 22, 2019
    What were the top 10 WordPress related posts that provided the most value to you over the last year? The post Meks’s top 10 WordPress related posts in 2018 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • List of the best WordPress directory plugins for 2019 January 17, 2019
    Here’s our list of the best WordPress directory plugins that will transform your site into full business-related online directory. The post List of the best WordPress directory plugins for 2019 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • How to embed Google form in WordPress? January 10, 2019
    Don’t know how to embed Google form in WordPress? Read our tutorial and learn all there is to it, within minutes! The post How to embed Google form in WordPress? appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • Podcast with WordPress – the ultimate 2019 tutorial January 3, 2019
    Why and how you should start a podcast with WordPress? Let us dazzle you with the most relatable business stats and convince you it’s the right thing to do The post Podcast with WordPress – the ultimate 2019 tutorial appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • WordPress 2018 year in review December 24, 2018
    Interested in WordPress 2018 year in review? Here’s our recap of some of the most important things that happened in the WordPress environment. The post WordPress 2018 year in review appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • How to easily change or reset a WordPress password? December 19, 2018
    Easy ways to reset WordPress password manually and with no trouble at all! Plus, a tip why you should change it on a regular basis! The post How to easily change or reset a WordPress password? appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • 4 steps guide to create a WordPress review website December 13, 2018
    Create profitable WordPress review website in 4 easy steps! The post 4 steps guide to create a WordPress review website appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • WCUS 2018 State of the Word December 9, 2018
    Just as last year, join us for WCUS 2018 State of the Word recap and everything you were keen to know about WordPress 5.0, Gutenberg and more! The post WCUS 2018 State of the Word appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • 10+ best Facebook groups for bloggers (you may never heard of) December 6, 2018
    Pick and choose among some of the best Facebook groups for bloggers and start boosting your traffic and engagement as of today! The post 10+ best Facebook groups for bloggers (you may never heard of) appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • Getting ready for WordPress 5.0 (actionable “to the point” tips & explanation) December 5, 2018
    A new major WordPress update (version 5.0) is just around the corner (or it has been released already if you are reading this post after December 6th). During the past few months, we’ve been reading different opinions and points of view regarding WP 5.0 and its upcoming post/page editor, which was available for testing as […]
    Meks

Text

Distinctively utilize long-term high-impact total linkage whereas high-payoff experiences. Appropriately communicate 24/365.

تعاون کریں

سارے کام اللہ تعالی کی توفیق و نصرت سے ہی ہوتے ہیں الحمدللہ اخلاص سے بنائے ہوئے تمام منصوبے اللہ تعالی مکمل کرتے ہیں ۔آپ بھی صدقات ،خیرات اور اپنے مال کے ذریعے جامعہ کے ساتھ تعاون کریں ۔جامعہ کے ساتھ تعاون بھیجنے کے لیے درج ذیل طریقے اختیار کرنا ممکن ہیں

تعاون بذریعہ موبی کیش ۔اکاونٹ03024056187
تعاون بذریعہ ایزی پیسہ 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
تعاون بذریعہ پے پال کریڈٹ کارڈز ہولڈرز، بیرون ملک مقیم اور پے پال اکاؤنٹ رکھنے والے حضرات اب پے پال کے ذریعے سے بھی ہمیں ڈونیشن بھیج سکتے ہیں۔ https:paypal.me/hahmad674
تعاون بذریعہ ویسٹرن یونین: محمدابراہیم بن بشیر احمد 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
’’مَّن ذَا الَّذِي يُقْرِ‌ضُ اللَّهَ قَرْ‌ضًا حَسَنًا فَيُضَاعِفَهُ لَهُ أَضْعَافًا كَثِيرَ‌ةً ۚ وَاللَّهُ يَقْبِضُ وَيَبْسُطُ وَإِلَيْهِ تُرْ‌جَعُونَ‘
“ایسا بھی کوئی ہے جو اللہ تعالیٰ کو اچھا قرض دے پس اللہ تعالیٰ اسے بہت بڑھا چڑھا کر عطا فرمائے، اللہ ہی تنگی اور کشادگی کرتا ہے اور تم سب اسی کی طرف لوٹائے جاؤ گے “

مَّثَلُ ٱلَّذِينَ يُنفِقُونَ أَموَٲلَهُمۡ فِى سَبِيلِ ٱللَّهِ كَمَثَلِ حَبَّةٍ أَنۢبَتَتۡ سَبعَ سَنَابِلَ فِى كُلِّ سُنبُلَةٍ۬ مِّاْئَةُ حَبَّة وَٱللَّهُ يُضَعِفُ لِمَن يَشَآءُ‌ۗ وَٱللَّهُ وَٲسِعٌ عَلِيمٌ ( سُوۡرَةُ البَقَرَة۔٢٦١ )
’’ جولوگ اپنے مال اللہ کی راہ میں ڈرف کرتے ہیں، اُن کے خرچ کی مثال ایسی ہے جیسے ایک دانہ بویا جائے اور اس سے سات بالیں نکلیں اور ہر بال میں سَو دانے ہوں۔اسی طرح اللہ جس کے عمل کو چاہتے ہیں، افزونی عطا فرماتے ہیں۔اور الله تعالیٰ بڑی وسعت والے ہیں، جاننے والے ہیں۔ ‘‘

WhatsApp chat