}); فتاوی صدائے قلم شمارہ نمبر۳۷۶ – ابن حنبل انٹرنیشنل
دارلافتاء

فتاوی صدائے قلم شمارہ نمبر۳۷۶

فتاوی
از محمد ابراہیم بن بشیر الحسینوی
رئیس جامعہ امام احمد بن حنبل ، سوہڈل آباد ،بائی پاس،قصور
وٹس اپ:03024056187
سوال :میت رات کو دفن کرناکیا درست ہے ؟
جواب : سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ایک ایسے آدمی (کی قبر) پر نمازِ جنازہ پڑھائی جسے رات کو دفن کیا گیا تھا۔۔۔ (صحیح البخاری : ۱۳۴۰)اس حدیث پر امام بخاری نے باب باندھا ہے کہ ’’ رات کو دفن کرنا ‘‘ سیدنا ابو بکر رضی اللہ عنہ رات کو دفن کئے گئے ۔ (صحیح البخاری: قبل ح ۱۳۴۰ )حافظ ابن حجر لکھتے ہیں کہ ان صحابہ کا یہ عمل جواز میں اجماع کی مانند ہے۔(فتح الباری ۳؍۲۶۷) اور سیدہ فاطمہ رضی اللہ عنہا کو بھی رات کو دفن کیا گیا تھا۔ ( صحیح البخاری : ۴۲۴۰، ا۴۲۴)امام ترمذی فرماتے ہیں کہ: ’’ بہت زیادہ محدثین نے رات کو دفن کرنے کی اجازت دی ہے۔ ‘‘ ( سنن الترمذی تحت ح ۱۰۵۷)
سوال : رات کے آداب بیان کریں ؟
جواب : شام ہوتے ہی بچوں کو گھر میں روک لیا جائے کیونکہ اس وقت شیطان نکل آتے ہیں۔ (صحیح البخاري: ۳۳۰۴، صحیح مسلم : ۲۰۱۲، دارالسلام : ۵۲۵۰)سورج غروب ہوتے ہی مویشیوں کو باندھ دے پھر انھیں نہ چھوڑے جب تک کہ شام کی سیاہی نہ جاتی رہے۔ (صحیح مسلم : ۲۰۱۳)رات کو سوتے وقت اللہ کا نام لے کر دروازوں کو بند کر دینا۔ اللہ کا نام لے کر برتنوں کو ڈھانک دے۔ اگر ڈھانکنے کے لئے کوئی چیز نہ ملے توکوئی لکڑی اس کے اوپر رکھ دے۔ اللہ کا نام لے کر مشکیزوں کے منہ باندھ دے۔ اللہ کا نام لے کرموم بتی وغیرہ بجھا دے۔ ( صحیح مسلم : ۲۰۱۲)آگ کو جلتا ہوا نہ چھوڑے ۔ ( صحیح مسلم : ۲۰۱۵)رسول اللہ ﷺنے فرمایا کہ بے شک یہ آگ تمھاری دشمن ہے جب تم سونے کا ارادہ کرو تو اس کو بجھا دو۔ (صحیح مسلم : ۲۰۱۶)عشاء سے پہلے سونا اور عشاء کے بعد ( بغیر شرعی عذر کے )باتیں کرنا مکروہ ہے۔ (صحیح البخاری : ۵۶۸)مگر علم سیکھنے یا اہلیہ اور مہمانوں سے بات کرنا عشاء کے بعد بھی جائز ہے۔(صحیح البخاری : ۶۰۰ تا ۶۰۲)بچوں کا عشاء کے بعد اور فجر سے پہلے (والدین کے)کمرہ میں بغیر اجازت داخل ہونا منع ہے۔ ( دیکھئے النور : ۵۸)
سوال :مردوں سے وسیلہ پکڑنے والی روایت’’ اے اللہ کے بندو میری مدد کرو‘‘کیا ضعیف ہے ؟
جواب : اس روایت کی تحقیق میں ہمارے فاضل بھائی شیخ مقبول احمد سلفی اسلامک دعوۃ سنٹر- طائف نے ایک مفصل مضمون لکھا جس کی تلخیص پیش کی جاتی ہے ۔
مردے زندوں کی کچھ بھی مدد نہیں کرسکتے ہیں بلکہ وہ خود زندوں کے محتاج ہیں تاکہ انہیں دعاواستغفار اورصدقہ وخیرات کے ذریعہ فائدہ پہنچائے۔ اس قسم کے گھڑے ہوئے واقعات صوفی حضرات پیش بھی کرتے ہیں،وہ ہماری کچھ بھی مدد نہیں کرسکتے، وہ کسی کے نفع ونقصان کا ذرہ برابر اختیار نہیں رکھتے قرآن کے بے شمار دلائل ہیں اور اسی طرح احادیث سے بھی ثابت ہے۔مردوں سے مدد طلب کرنے سے متعلق بعض حضرات بہت سارے دلائل پیش کرتے ہیں،ان میں بعض تو گھڑی ہوئی ہیں، بعض ضعیف احادیث ہیں جن سے استدلال نہیں کیاجاسکتا اور بعض دلائل کو ان کے اصل معنی ومفہوم سے ہٹاکر غلط سلط حجت پکڑی جاتی ہے۔ یہاں میرا مقصود ایک دلیل کی وضاحت ہے۔وہ روایت سند کے ساتھ اس طرح ہے جسے طبرانی نے ذکر کیا ہے۔حدثنا ابراہیم بن نائلۃالاصبھانی ، ثنا الحسن بن عمر بن شقیق، ثنا معروف بن حسان السمرقندی، عن سعید بن ابی عروبۃ عن قتادہ عن عبداللہ بن بریدۃ عن عبداللہ بن مسعودقال: قال رسول اللہ ﷺ: اذا انفلتت دابۃ احدکم بارض فلاۃ فلیناد : یاعباداللہ ، احبسوا علی ، یاعباداللہ ، احبسوا علی ، فان للہ فی الارض حاضرا سیحبسہ علیکم ( رواہ الطبرانی فی المعجم الکبیر) ترجمہ: حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جب تم میں سے کسی کی سواری بیاباں میں چھوٹ جائے تو اس (شخص) کو (یہ) پکارنا چاہیے , اے اللہ کے بندو! میری سواری پکڑا دو، اے اللہ کے بندو! میری سواری پکڑا دو کیونکہ اللہ تعالیٰ کے بہت سے (ایسے) بندے اس زمین میں ہوتے ہیں، وہ تمہیں (تمہاری سواری) پکڑا دیں گے۔روایت کا حکم: یہ روایت طبرانی کے علاوہ دیگر اور کتب میں مذکور ہے جو سب عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کے طریق سے ہے،ہیثمی نے اس روایت پر کلام کرتے ہوئے کہا کہ اس کی سند میں معروف بن حسان ضعیف ہے۔(مجمع الزوائد:10/135)۔ایک دوسری علت یہ ہے کہ قتادہ مدلس راوی ہیں جو عن سے روایت کرتے ہیں۔ تیسری علت حافظ ابن حجر ؒ نے بیان کی وہ ابن بریدہ اور ابن مسعود کے درمیان انقطاع کا ذکر کرتے ہیں،اس وجہ سے ان کے نزدیک یہ روایت ضعیف ہے۔(شرح الاذکار:5/150)۔ علامہ البانی رحمہ اللہ نے بھی اس حدیث پر ضعف کا حکم لگا یا ہے۔(دیکھیں:السلسلۃ الضعیفہ:655، ضعیف الجامع:404، الکلم الطیب:178)روایت کا حکم: اس روایت میں بھی کئی علتیں ہیں جس کے سبب یہ بھی ضعیف ہے۔پہلی علت: عبدالرحمن بن سہل ضعیف راوی ہے۔دوسری علت: عبدالرحمن بن سہل کے باپ شریک بن عبداللہ نخعی کے حفظ وضبط پر کلام ہے۔تیسری علت: زید بن علی اور عتبہ بن غزوان کے درمیان انقطاع پایا جاتا ہے جیساکہ حافظ ابن حجر ؒ نے ذکر کیا ہے۔اس لئے یہ روایت ضعیف ہے، اسے شیخ البانی رحمہ اللہ نے بھی ضعیف کہا ہے۔ (دیکھیں: السلسلۃ الضعیفہ: 656، ضعیف الجامع:383)ان دونوں روایتوں کی حقیقت سامنے آگئی اب اس کو مدنظر رکھتے ہوئے نیچے چند باتیں ملاحظہ فرمائیں۔اولا: یہ دونوں روایتیں ضعیف ہیں،ان روایتوں سے قطعی دلیل نہیں پکڑی جائے گی اس لئے مردوں پہ فٹ کرنا اور ان سے وسیلہ کے لئے حجت بنانا بالکل صحیح نہیں ہے۔ ثانیا: دوسری روایت کے آخری الفاظ ہیں’’ وقد جرب ذلک‘‘ یعنی یہ تجربہ شدہ بات ہے جیساکہ تجربے والی بات امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ کی طرف بھی منسوب ہے تو یہاں یہ بات واضح رہے کہ اسلام میں کوئی بات تجربے کی وجہ سے ثابت نہیں ہوتی اور محض کسی کا تجربہ دین میں دلیل نہیں ہوگی، دلیل وہی ہے جو شارع علیہ السلام کی طرف سے آئی ہے۔ ثالثا: اگر تھوڑی دیر کے لئے بحث کے طور پر نہ کہ استناد وحجت کے طور پر ان کو صحیح مان بھی لیا جائے تو یہاں جن کا پکارنا ہے وہ فرشتے ہیں نہ کہ جن، انسان یا ولی جیساکہ شیخ البانی رحمہ اللہ نے بڑی جامع بات کہی ہے کہ حدیث میں عباد اللہ سے مراد بشر کے علاوہ مخلوق ہے جس پہ پہلی حدیث کے الفاظ’’ فان للہ فی الارض حاضرا سیحبسہ علیکم‘‘ اوردوسری حدیث کے الفاظ’’فان للہ عبادا لانراھم‘‘ دلالت کرتے ہیں۔ یہ وصف فرشتے یا جن پر منطبق ہوتے ہیں اور چونکہ جن سے استعانت ممنوع ہے جس پہ واضح دلیل ہے، بچ گیا فرشتے تو یہاں صرف فرشتے مراد ہیں(شیخ البانی ؒ کے کلام کا مفہوم ختم ہوا)یہاں عباد اللہ سے فرشتوں کے علاوہ کسی اورکو مراد لے ہی نہیں سکتے ہیں، یہ ماننا ہوگا کہ اللہ تعالی نے فرشتوں کواس کام پر مامور کررکھا ہے، جب بیابان میں سامان گم ہونے والا مدد کے لئے اللہ کے بندے کو پکارتا ہے تو یہی فرشتے اللہ کے حکم سے مدد کرتے ہیں۔جس قسم کی ضعیف حدیث سے بیابان میں غیراللہ سے امداد کی دلیل پکڑتے ہیں اس قسم کی ایک ضعیف روایت جو کہ مسند بزار میں ہے اس سے صاف پتہ چلتا ہے کہ جنہیں پکارا جاتا ہے وہ فرشتے ہیں۔اللہ کا فرمان ہے: ترجمہ:بات یہ ہے کہ چند انسان بعض جنات سے پناہ طلب کیا کرتے تھے جس سے جنات اپنی سرگشی میں اور بڑھ گئے۔ (الجن:6)۔۔۔ سادسا: ان ضعیف احادیث کو بنیاد بناکر بعض حضرات وفات یافتہ ولیوں اور مردوں لوگوں کو پکارتے ہیں جبکہ حدیث ہی سرے سے قابل حجت نہیں ہے۔ میں نے کہا کہ اگر بفرض محال مان بھی لیا جائے تو اس سے غیراللہ (جن وانس)کو پکارنے پر حجت پکڑنا کسی بھی طرح صحیح نہیں ہے کیونکہ قرآن وحدیث میں غیراللہ کو پکارنے سے منع کیا گیا اور یہ سراسر شرک ہے، صرف اور صرف اللہ تعالی کوہی پکارا جائے گا۔ اللہ تعالی کا فرمان ہے: ترجمہ: اور تم اللہ کو چھوڑ کر کسی کو مت پکارو جو تمھارا بھلا کرسکے نہ نقصان، اگر تم نے ایسا کیا تو تم ظالموں (یعنی مشرکوں)میں سے ہو جاؤ گے۔(یونس:۱۰۶) یہ ساری آیات بین ثبوت ہیں کہ مردے نہ تو ہماری بات سنتے ہیں اور نہ ہی ہم انہیں سناسکتے ہیں بلکہ قیامت تک ہماری پکار سے غافل ہیں،اگر سن بھی لیں تو وہ نفع ونقصان کا کچھ بھی اختیار نہیں رکھتے لہذا معلوم یہ ہواکہ صرف اللہ کو ہی پکارا جائے گا۔

Calendar

February 2019
S S M T W T F
« Jan    
 1
2345678
9101112131415
16171819202122
232425262728  

RSS Meks Blog

  • YoastCon 2019 recap: the best and most updated SEO tips 2019 February 11, 2019
    What are some of the best SEO tips 2019 to cover? Here's what we learned in this year's YoastCon! The post YoastCon 2019 recap: the best and most updated SEO tips 2019 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • WordPress content marketing strategy explained (plus PRO tips and tricks) February 7, 2019
    What exactly is WordPress content marketing strategy and why do you need one? #WPtips How to create and implement WordPress content marketing strategy? #contentmarketing The post WordPress content marketing strategy explained (plus PRO tips and tricks) appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • 12 best brand color palette tools to make your perfect blog colors January 30, 2019
    How to define and choose the right brand color palette without the help of a designer? Is it even doable by yourselves? You’d be surprised :) The post 12 best brand color palette tools to make your perfect blog colors appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • Meks’s top 10 WordPress related posts in 2018 January 22, 2019
    What were the top 10 WordPress related posts that provided the most value to you over the last year? The post Meks’s top 10 WordPress related posts in 2018 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • List of the best WordPress directory plugins for 2019 January 17, 2019
    Here’s our list of the best WordPress directory plugins that will transform your site into full business-related online directory. The post List of the best WordPress directory plugins for 2019 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • How to embed Google form in WordPress? January 10, 2019
    Don’t know how to embed Google form in WordPress? Read our tutorial and learn all there is to it, within minutes! The post How to embed Google form in WordPress? appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • Podcast with WordPress – the ultimate 2019 tutorial January 3, 2019
    Why and how you should start a podcast with WordPress? Let us dazzle you with the most relatable business stats and convince you it’s the right thing to do The post Podcast with WordPress – the ultimate 2019 tutorial appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • WordPress 2018 year in review December 24, 2018
    Interested in WordPress 2018 year in review? Here’s our recap of some of the most important things that happened in the WordPress environment. The post WordPress 2018 year in review appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • How to easily change or reset a WordPress password? December 19, 2018
    Easy ways to reset WordPress password manually and with no trouble at all! Plus, a tip why you should change it on a regular basis! The post How to easily change or reset a WordPress password? appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • 4 steps guide to create a WordPress review website December 13, 2018
    Create profitable WordPress review website in 4 easy steps! The post 4 steps guide to create a WordPress review website appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic

Text

Distinctively utilize long-term high-impact total linkage whereas high-payoff experiences. Appropriately communicate 24/365.

تعاون کریں

سارے کام اللہ تعالی کی توفیق و نصرت سے ہی ہوتے ہیں الحمدللہ اخلاص سے بنائے ہوئے تمام منصوبے اللہ تعالی مکمل کرتے ہیں ۔آپ بھی صدقات ،خیرات اور اپنے مال کے ذریعے جامعہ کے ساتھ تعاون کریں ۔جامعہ کے ساتھ تعاون بھیجنے کے لیے درج ذیل طریقے اختیار کرنا ممکن ہیں

تعاون بذریعہ موبی کیش ۔اکاونٹ03024056187
تعاون بذریعہ ایزی پیسہ 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
تعاون بذریعہ پے پال کریڈٹ کارڈز ہولڈرز، بیرون ملک مقیم اور پے پال اکاؤنٹ رکھنے والے حضرات اب پے پال کے ذریعے سے بھی ہمیں ڈونیشن بھیج سکتے ہیں۔ https:paypal.me/hahmad674
تعاون بذریعہ ویسٹرن یونین: محمدابراہیم بن بشیر احمد 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
’’مَّن ذَا الَّذِي يُقْرِ‌ضُ اللَّهَ قَرْ‌ضًا حَسَنًا فَيُضَاعِفَهُ لَهُ أَضْعَافًا كَثِيرَ‌ةً ۚ وَاللَّهُ يَقْبِضُ وَيَبْسُطُ وَإِلَيْهِ تُرْ‌جَعُونَ‘
“ایسا بھی کوئی ہے جو اللہ تعالیٰ کو اچھا قرض دے پس اللہ تعالیٰ اسے بہت بڑھا چڑھا کر عطا فرمائے، اللہ ہی تنگی اور کشادگی کرتا ہے اور تم سب اسی کی طرف لوٹائے جاؤ گے “

مَّثَلُ ٱلَّذِينَ يُنفِقُونَ أَموَٲلَهُمۡ فِى سَبِيلِ ٱللَّهِ كَمَثَلِ حَبَّةٍ أَنۢبَتَتۡ سَبعَ سَنَابِلَ فِى كُلِّ سُنبُلَةٍ۬ مِّاْئَةُ حَبَّة وَٱللَّهُ يُضَعِفُ لِمَن يَشَآءُ‌ۗ وَٱللَّهُ وَٲسِعٌ عَلِيمٌ ( سُوۡرَةُ البَقَرَة۔٢٦١ )
’’ جولوگ اپنے مال اللہ کی راہ میں ڈرف کرتے ہیں، اُن کے خرچ کی مثال ایسی ہے جیسے ایک دانہ بویا جائے اور اس سے سات بالیں نکلیں اور ہر بال میں سَو دانے ہوں۔اسی طرح اللہ جس کے عمل کو چاہتے ہیں، افزونی عطا فرماتے ہیں۔اور الله تعالیٰ بڑی وسعت والے ہیں، جاننے والے ہیں۔ ‘‘

WhatsApp chat