}); *چند میلادی شبہات کا ازالہ* – ابن حنبل انٹرنیشنل
احکام و مسائل مقالات

*چند میلادی شبہات کا ازالہ*

*1- ابو لہب نے میلاد منایا :*
قَالَ عُرْوَةُ وثُوَيْبَةُ مَوْلَاةٌ لِأَبِي لَهَبٍ كَانَ أَبُو لَهَبٍ أَعْتَقَهَا فَأَرْضَعَتْ النَّبِيَّ ﷺ فَلَمَّا مَاتَ أَبُو لَهَبٍ أُرِيَهُ بَعْضُ أَهْلِهِ بِشَرِّ حِيبَةٍ قَالَ لَهُ مَاذَا لَقِيتَ قَالَ أَبُو لَهَبٍ لَمْ أَلْقَ بَعْدَكُمْ غَيْرَ أَنِّي سُقِيتُ فِي هَذِهِ بِعَتَاقَتِي ثُوَيْبَةَ
عروہ نے کہا کہ ثویبہ ابو لہب کی لونڈی تھی اور ابو لہب نے اسے آزاد کردیا تھا ۔ تو اس نے نبی ﷺ کو دودھ پلایا ۔ جب ابو لہب مر گیا تو اسکے خاندان میں سے کسی نے خواب میں اسے بری حالت میں دیکھا تو اس نے کہا تو نے کیا پایا ؟ ابو لہب نے کہا تمہارے بعد میں نے سکون نہیں پایا سوائے اس بات کے کہ ثویبہ کو آزاد کرنے کی وجہ سے ذرا سا پانی اس میں سے پلا دیا جاتا ہوں ۔
[صحيح البخاري كتاب النكاح باب وأمهاتكم الآتي أرضعنكم …. (5101)] اس روایت سے معلوم ہوا کہ جب کوئی کافر بھی نبی کریم ﷺ وسلم کی ولادت کی خوشی میں لونڈی آزاد کرے تو اسکے عذاب میں تخفیف ہوجاتی ہے تو ایک مؤمن اور مسلمان کی تو کیا ہی بات ہے ۔

*ازالہ :*

*اولا :*
یہ قرآن مجید فرقان حمید کی نص صریح کے خلاف ہے ۔ اللہ رب العالمین کا فرمان ہے : تَبَّتْ يَدَا أَبِي لَهَبٍ وَتَبَّ (1) مَا أَغْنَى عَنْهُ مَالُهُ وَمَا كَسَبَ (2) سَيَصْلَى نَارًا ذَاتَ لَهَبٍ (3)
”ابو لہب کے دونوں ہاتھ ہلاک ہوگئے اور وہ خود بھی ہلاک ہوگیا ، اسے اس کے مال اور اعمال نے کچھ فائدہ نہ دیا ۔”
[سورة اللهب] نیز فرمایا :
وَقَدِمْنَا إِلَى مَا عَمِلُوا مِنْ عَمَلٍ فَجَعَلْنَاهُ هَبَاءً مَنْثُورًا
اور انہوں نے جو عمل کیے ہم انکی طرف متوجہ ہوکر انہیں بکھرے ہوئے ذروں کی طرح کر دیں گے ۔
(الفرقان:23)

*ثانیا :*
یہ روایت باسند صحیح ثابت نہیں کیونکہ یہ عروہ کی مرسل روایت ہے جیسا کہ صحیح بخاری کی عبارت سے واضح ہے ۔ اور عروہ نےیہ واضح نہیں کیا کہ اسے کس نے یہ خواب سنایا ہے ؟!
یعنی یہ روایت مرسل ہونے کے وجہ سے ضعیف ہے ۔

*ثالثا :*
اگر یہ بسند صحیح ثابت بھی ہو جائے تو حجت نہیں کیونکہ یہ خواب ہے ۔ اورغیر انبیاء کے خواب دین میں حجت نہیں ہوتے ۔
اگر اہل میلاد خوابوں کو حجت مانتے ہیں تو اس خواب کے بارہ میں انکی کیا رائے ہے ؟ جسے أبو بكر أحمد بن علي بن ثابت بن أحمد بن مهدي الخطيب البغدادي (المتوفى: 463هـ) نے اپنی کتاب تاريخ بغداد 13/403 (ط: الأولى، 1417 هـ , دار الكتب العلمية – بيروت) میں بسند صحیح نقل کیا ہے :
محمد بن حماد﷬ فرماتے ہیں ” رَأَيْتُ النَّبی ﷺ فِي المنام، فَقُلْتُ: يَا رَسُولَ اللهِ، مَا تَقُولُ فِي النظر في كلام أبي حنيفة وأصحابه، وأنظر فيها وأعمل عليها؟ قال: لا، لا، لا، ثلاث مرات. قلت: فما تقول في النظر في حديثك وحديث أصحابك، أنظر فيها وأعمل عليها؟ قال: نعم، نعم، نعم ثلاث مرات. ثم قلت: يَا رَسُولَ الله ، عَلّـِمْــنِي دُعَاءً أَدْعُو بِهِ، فعـلمني دعاء وقاله لي ثلاث مرات، فلما استيقظت نسيته.”
میں نے خواب میں نبی ﷺ کو دیکھا تو میں نے کہا اے اللہ کے رسول ﷺ آپ ابو حنیفہ اور اسکے ساتھیوں کی (کلام) فقہ کو حاصل کرنے کے بارہ میں کیا فرماتے ہیں ؟ کیا میں اسے سیکھوں اور اس پر عمل کروں؟ تو آپ ﷺ نے فرمایا ” نہیں , نہیں , نہیں” تین مرتبہ کہا ۔ پھر میں نے پوچھا تو آپ ﷺ اپنی اور اپنے ساتھیوں کی حدیث کا علم حاصل کرنے کے بارہ میں کیا فرماتے ہیں ؟ کیا میں اسے سیکھوں اور اس پر عمل کروں ؟ تو آپ ﷺ نے فرمایا ” ہاں , ہاں , ہاں ” تین مرتبہ فرمایا ۔پھر میں نے عرض کیا یا رسول اللہ ﷺ آپ ﷺ مجھے کوئی دعاء سکھائیں تاکہ میں وہ دعاء مانگا کروں ۔ تو آپ ﷺ نے مجھے دعاء سکھلائی اور اسے تین مرتبہ دہرایا جب میں بیدار ہوا تو وہ دعاء بھول گیا ۔
کیا بریلوی ذریت اس خواب کو حجت جان کر ابو حنیفہ کی تقلید سے توبہ کرنے کو تیار ہے ؟!

*رابعا :*
اگر بالفرض مان لیا جائے کہ ابو لہب نے میلاد منایا لیکن اس بات کو کیسے بھولا جاسکتا ہے کہ میلاد منانے والے نے نبی ﷺ کی بات کبھی نہیں مانی !
صدحیف کہ آج بھی میلاد منانے والے نبی ﷺ کا میلاد تو مناتے ہیں لیکن نبی ﷺ کی سنت پر عمل کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں بلکہ الٹا اسکی مخالفت کرتے ہیں ۔کہ نبی ﷺ نے تو اپنی ولادت کے روز یعنی ہر سموار کو روزہ رکھا ہے لیکن یہ سال بعد عید مناتے ہیں ۔ نبی ﷺ کے روزے والے دن عید! کہیں یہ سنت بولہبی تونہیں !!!

*2- میلاد ماننے کا حکم اللہ نے دیا ہے !*
اللہ تعالى نے فرمایا ہے: “قُلْ بِفَضْلِ اللهِ وَبِرَحْمَتِهِ فَبِذَلِكَ فَلْيَفْرَحُوا هُوَ خَيْرٌ مِمَّا يَجْمَعُونَ”
کہہ دیجئے کہ اللہ تعالى کے فضل ورحمت کے ساتھ, پس اسکے ساتھ وہ خوش ہوجائیں , وہ اس سے بہتر ہے جسے یہ جمع کرتے ہیں ۔
(يونس:58)
اس آیت میں اللہ تعالى اپنی رحمت پر خوشی منانے کا حکم دے رہے ہیں ۔ اور نبی کریم ﷺ تو رحمۃ للعالمین ہیں , لہذا انکی آمد پر سب سے زیادہ خوشی منانی چاہیے ۔

*ازالہ*

*اولا:*
اس آیت میں آپ ﷺ کی ولادت باسعادت کا کوئی تذکرہ ہی نہیں ہے ۔ہاں اس سے پچھلی آیت میں نزول قرآن اور نزول ہدایت کا ذکر ضرور ہے ۔

*ثانیا:*
لغت عرب میں فرحت ,خوشی محسوس کرنے کو کہتے ہیں ,خوشی یا جشن منانے کو نہیں ! ۔خوش ہونا اور چیز ہے اور خوشی منانا یا جشن منانا اور چیز ہے ۔ ان دونوں باتوں میں زمین آسمان کا فرق ہے ۔
مثلا :
اللہ تعالى نے سورہ توبہ میں غزوہء تبوک سے پیچھے رہ جانے والے منافقین کے بارہ میں فرمایا ہے :
فَرِحَ الْمُخَلَّفُونَ بِمَقْعَدِهِمْ خِلَافَ رَسُولِ اللهِ
رسول اللہ ﷺ (کے ساتھ غزوہ تبوک پر جانے کی بجائے آپ ﷺ) سے پیچھے رہنے والے خوش ہوئے ۔
(التوبة :81)
تو کیا منافقین نے جشن منایا اور ریلیاں نکالی تھیں یا دلی خوشی محسوس کی تھی ؟؟؟

*ثالثا :*
اگر یہ آیت واقعتا جشن منانے کی دلیل ہے تو پھر رسول اللہ ﷺ‘ صحابہ کرام ] , تابعین و تبع تابعین وائمہ دین s نے اس پر عمل کیوں نہیں کیا ؟!

*3- نعمت پر عید منانا انبیاء کا شیوہ ہے*
اللہ تعالى نے قرآن مجید میں ارشاد فرمایا ہے :
” قَالَ عِيسَى ابْنُ مَرْيَمَ اللَّهُمَّ رَبَّنَا أَنْزِلْ عَلَيْنَا مَائِدَةً مِنَ السَّمَاءِ تَكُونُ لَنَا عِيدًا لِأَوَّلِنَا وَآخِرِنَا وَآيَةً مِنْكَ وَارْزُقْنَا وَأَنْتَ خَيْرُ الرَّازِقِينَ”
عیسى بن مریم نے کہااے اللہ ! اے ہمارے رب ! ہم پر آسمان سے کھانا نازل فرما جوہمارے اول و آخر سب کے لیے عید ہو جائے اور تیری طرف سے نشانی ہو ۔ اور ہمیں رزق دے اور تو ہی سب رزق دینے والوں میں سے بہترین رزق دینے والا ہے ۔
(المائدة : 114)
اس آیت میں عیسى بن مریم i مائدہ کے نازل ہونے کے دن کو عید کا دن قرار دے رہے ہیں ۔ تو ہم آمد رسول ﷺ کے دن کو عید کا دن کیوں نہیں قرار دے سکتے ؟

*ازالہ*
اس آیت کو عید میلاد النبیﷺ پر دلیل بنانا فہم کا سہو ہے ۔ کیونکہ :

*اولا :*
عیسى بن مریم i مائدہ کو عید قرار دے رہے ہیں نہ کہ مائدہ نازل ہونے کے دن کو ! , کیونکہ ” تَكُونُ لَنَا عِيدًا” میں کلمہ “تکون” واحد مؤنث کا صیغہ ہے جس کا مرجع مائدہ ہے۔اور مائدہ کا نزول باعث خوشی ہے نہ کہ باعث جشن !۔

*ثانیا :*
اگر یہاں سے عید مراد لے بھی لی جائے تو پھر ہر مائدہ کے نزول پر عید منانا لازم آتا ہے اورنزول مائدہ والا یہ کام توروزانہ بلا ناغہ صبح وشام ہوتا تھا !۔ اور پھر عید منانے اور جشن منانے میں بڑا فرق ہے ۔ مسلمانوں کی عید ین یعنی عید الفطر اور عید الاضحى کے دن بھی رسول اللہ ﷺ سے جشن منانا یا ریلیاں اور جلوس نکالنا ثابت نہیں, فتدبر…. !

Calendar

April 2019
S S M T W T F
« Mar    
 12345
6789101112
13141516171819
20212223242526
27282930  

RSS Meks Blog

  • 6+ video marketing tips to improve your vlogging [2019 edition] April 17, 2019
    Wondering what would be some of the best video marketing tips that can help you step up your vlogging game? We’ve got you covered! The post 6+ video marketing tips to improve your vlogging [2019 edition] appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • 18 top Google Chrome extensions for WordPress April 10, 2019
    Looking for the most useful WordPress Chrome extensions to make your site more functional and engaging? Take a look at our list of top Chrome addons to use! The post 18 top Google Chrome extensions for WordPress appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • What’s the best WordPress quiz plugin to use? April 4, 2019
    Are you looking for the best WordPress quiz plugin? Here are our top choices for you to try out! The post What’s the best WordPress quiz plugin to use? appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • WordPress 5 (Gutenberg) block editor keyboard shortcuts March 27, 2019
    In search of the Gutenberg keyboard shortcuts to ease your work? Here's the list of all the most up-to-date ones to make you more productive. The post WordPress 5 (Gutenberg) block editor keyboard shortcuts appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • Top WordPress bloggers to follow and learn from in 2019 March 20, 2019
    Looking for some of the top WordPress bloggers to learn from? These are the people that bring and share valuable information for the evergrowing community. The post Top WordPress bloggers to follow and learn from in 2019 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • What to blog about? 17 ways to come up with the new content March 13, 2019
    Every now and then, trying to figure out what to blog about can be a bit of a struggle. Luckily, we came up with the list of topics and way to collect them, so, grab a cup of coffee and enjoy this reading! The post What to blog about? 17 ways to come up with […]
    Ivana Cirkovic
  • The best WordPress live chat plugins to use – 2019 edition March 7, 2019
    Looking for WordPress chat plugin to improve your site performance and UI? Here are the ones we recommend. The post The best WordPress live chat plugins to use – 2019 edition appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • How to embed PDF in WordPress + 7 free plugins to choose from February 27, 2019
    Wondering how to embed PDF in WordPress and which plugin to use? These are our recommendation, pick and choose the one that best suits your needs. The post How to embed PDF in WordPress + 7 free plugins to choose from appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • The top 8 WordPress Project Management plugins February 18, 2019
    What would be some of the best WordPress project management plugins you can use to track your progress? The post The top 8 WordPress Project Management plugins appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic
  • YoastCon 2019 recap: the best and most updated SEO tips 2019 February 11, 2019
    What are some of the best SEO tips 2019 to cover? Here's what we learned in this year's YoastCon! The post YoastCon 2019 recap: the best and most updated SEO tips 2019 appeared first on Meks.
    Ivana Cirkovic

Text

Distinctively utilize long-term high-impact total linkage whereas high-payoff experiences. Appropriately communicate 24/365.

تعاون کریں

سارے کام اللہ تعالی کی توفیق و نصرت سے ہی ہوتے ہیں الحمدللہ اخلاص سے بنائے ہوئے تمام منصوبے اللہ تعالی مکمل کرتے ہیں ۔آپ بھی صدقات ،خیرات اور اپنے مال کے ذریعے جامعہ کے ساتھ تعاون کریں ۔جامعہ کے ساتھ تعاون بھیجنے کے لیے درج ذیل طریقے اختیار کرنا ممکن ہیں

تعاون بذریعہ موبی کیش ۔اکاونٹ03024056187
تعاون بذریعہ ایزی پیسہ 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
تعاون بذریعہ پے پال کریڈٹ کارڈز ہولڈرز، بیرون ملک مقیم اور پے پال اکاؤنٹ رکھنے والے حضرات اب پے پال کے ذریعے سے بھی ہمیں ڈونیشن بھیج سکتے ہیں۔ https:paypal.me/hahmad674
تعاون بذریعہ ویسٹرن یونین: محمدابراہیم بن بشیر احمد 03024056187۔شناختی کارڈ:3510229087223
’’مَّن ذَا الَّذِي يُقْرِ‌ضُ اللَّهَ قَرْ‌ضًا حَسَنًا فَيُضَاعِفَهُ لَهُ أَضْعَافًا كَثِيرَ‌ةً ۚ وَاللَّهُ يَقْبِضُ وَيَبْسُطُ وَإِلَيْهِ تُرْ‌جَعُونَ‘
“ایسا بھی کوئی ہے جو اللہ تعالیٰ کو اچھا قرض دے پس اللہ تعالیٰ اسے بہت بڑھا چڑھا کر عطا فرمائے، اللہ ہی تنگی اور کشادگی کرتا ہے اور تم سب اسی کی طرف لوٹائے جاؤ گے “

مَّثَلُ ٱلَّذِينَ يُنفِقُونَ أَموَٲلَهُمۡ فِى سَبِيلِ ٱللَّهِ كَمَثَلِ حَبَّةٍ أَنۢبَتَتۡ سَبعَ سَنَابِلَ فِى كُلِّ سُنبُلَةٍ۬ مِّاْئَةُ حَبَّة وَٱللَّهُ يُضَعِفُ لِمَن يَشَآءُ‌ۗ وَٱللَّهُ وَٲسِعٌ عَلِيمٌ ( سُوۡرَةُ البَقَرَة۔٢٦١ )
’’ جولوگ اپنے مال اللہ کی راہ میں ڈرف کرتے ہیں، اُن کے خرچ کی مثال ایسی ہے جیسے ایک دانہ بویا جائے اور اس سے سات بالیں نکلیں اور ہر بال میں سَو دانے ہوں۔اسی طرح اللہ جس کے عمل کو چاہتے ہیں، افزونی عطا فرماتے ہیں۔اور الله تعالیٰ بڑی وسعت والے ہیں، جاننے والے ہیں۔ ‘‘

WhatsApp chat